Imtezaaj, Urdu Research Journal, UOK - Karachi

امتزا ج

Department of Urdu, University of Karachi, Karachi, Pakistan
ISSN (print): 2518-9719
ISSN (online): 2518-976X

AUTHOR GUIDELINE

مقالہ نگاران سے درخواست ہے کہ مقالہ ارسال کرتے وقت ازراہ کرم حسب ذیل نکات کو مدنظر رکھا جائے ، بصورت دیگر ادارہ امتزاج اشاعت سے قاصر ہوگا۔

مقالہ نگاران کی آرا،تجزیوں اور استخراج نتائج ان کی ذاتی ذمے داری ہے اور اس ضمن میں "امتزاج" اور اس سے منسلک افراد اور ادارےہر قسم کی ذمے داری سے مبرا ہوں گے۔

1۔ "امتزاج" اُردو زبان و ادب کا تحقیقی مجلہ ہے اس لیےاس میں بھیجا جانے والا مقالہ بنیادی طور پر اردو زبان و ادب ہی سےمتعلق ہونا چاہیے۔

2۔ مقالات کی حروف کاری  ایم ایس ورڈ اور ان پیج   دونوں فارمیٹس میں کی جاسکتی ہے۔ایم ایس ورڈ میں  فونٹ (jameel noori nastaleeq)ہو ،متن کا فونٹ سائز  ۱۲ ,حواشی کا فونٹ سائز ۱۰ ,جبکہ ان پیج میں فونٹ نوری نستعلیق اور متن کافونٹ سائز ۱۴، اور حواشی کا ۱۲ ہو۔

3۔ مقالہ ارسال کرنے سے قبل ازراہ کرم تصدیق کر لیجیے   کہ :

·    مقالہ حروف چینی  کی اغلاط سے پاک ہے۔

·    مقالہ سرقے سے پاک ہے کیونکہ اشاعت سے پہلے  TURNITINسافٹ وئیر میں  اس کی تصدیق و تنقیح کی جائے گی اور اگر  پہلے سے مطبوعہ مواد سے مماثلت اور مشابہت  طے شدہ حد یعنی   19فی صد سے زیادہ  پائی گئی تو مقالہ ناقابلِ اشاعت تصورہوگا۔  علاوہ ازیں مقالہ نگار اپنے مقالے کے ساتھ ہی سرقے سے پاک ہونے کا  ایک اقرار نامہ جمع کرانے کا پابند ہوگا ۔یہ اقرار نامہ اسی ویب گاہ کے Download Menu  میں جا کر حاصل کیا جاسکتا ہے۔

·     "امتزاج" کو مقالہ بھیجنے کے بعد جب تک اس کے قابلِ اشاعت, ناقابلِ اشاعت یا تبدیل شدہ حالت میں قابل اشاعت ہونے کے بارے میں مجلسِ ادارت کی طرف سے اطلاع موصول نہ ہواُسے کسی اورجریدے میں اشاعت کے لیے نہ بھیجا جائے۔

4۔ مقالہ نگار کا نام، مقالے کا عنوان ، ملخص (Abstract)اور کلیدی الفاظ(Keywords)اُردو اور انگریزی دونوں زبانوں میں تحریر کیے جائیں اورمقالے کا ملخص ڈیڑھ سو سے دو سو الفاظ پر مشتمل ہو۔

5۔   مقالے کے آخر میں حواشی /حوالہ جات (references/endnotes) اور مآخذ (sources)  کی نشاندہی لازم ہے۔

6۔ مقالے میں حوالہ جات /حواشی کے اندراج کا مندرجہ ذیل طریقہ اختیار کیا جائے:

مصنف کا نام، کتاب کا نام(نسخ فونٹ یا Batool Unicode)، قوسین میں شہر کا نام، ناشر،سنِ اشاعت، صفحہ نمبر۔

مثال:   جمیل جالبی، تاریخ ادب اردو ،ج۴،(لاہور :مجلس ترقی ادب ،۲۰۱۲ء) ، ص ۲۴۵

     اگر ایک ہی کتاب سے دویا تین دفعہ حوالہ آئے تو بار بار مکمل حوالہ لکھنے کی بجائےکتاب کا نام ، محولہ بالا اور صفحہ نمبر لکھنا کافی ہوگا۔اگر ایک ہی کتاب کا دوسرا حوالہ فورا آئے تو  ایضا  لکھنا کافی ہے۔صفحہ نمبر الگ ہونے کی صورت میں ایضا کے بعد صفحہ نمبر بھی درج کیا جائے۔

مآخد میں مندرجہ بالا حوالہ اس طرح درج ہوگا:

جالبی ،جمیل، تاریخ ادب اردو،ج۴،لاہور:مجلس ترقی ادب ،۲۰۱۲ء

مزید تفصیلات کے لیے دیکھیے: https://www.chicagomanualofstyle.org/home.html

 

 

مقالہ نگاران سے درخواست ہے کہ مقالہ ارسال کرتے وقت ازراہ کرم حسب ذیل نکات کو مدنظر رکھا جائے ، بصورت دیگر ادارہ امتزاج اشاعت سے قاصر ہوگا۔

مقالہ نگاران کی آرا،تجزیوں اور استخراج نتائج ان کی ذاتی ذمے داری ہے اور اس ضمن میں "امتزاج" اور اس سے منسلک افراد اور ادارےہر قسم کی ذمے داری سے مبرا ہوں گے۔

1۔ "امتزاج" اُردو زبان و ادب کا تحقیقی مجلہ ہے اس لیےاس میں بھیجا جانے والا مقالہ بنیادی طور پر اردو زبان و ادب ہی سےمتعلق ہونا چاہیے۔

2۔ مقالات کی حروف کاری  ایم ایس ورڈ اور ان پیج   دونوں فارمیٹس میں کی جاسکتی ہے۔ایم ایس ورڈ میں  فونٹ (jameel noori nastaleeq)ہو ،متن کا فونٹ سائز  ۱۲ ,حواشی کا فونٹ سائز ۱۰ ,جبکہ ان پیج میں فونٹ نوری نستعلیق اور متن کافونٹ سائز ۱۴، اور حواشی کا ۱۲ ہو۔

3۔ مقالہ ارسال کرنے سے قبل ازراہ کرم تصدیق کر لیجیے   کہ :

·    مقالہ حروف چینی  کی اغلاط سے پاک ہے۔

·    مقالہ سرقے سے پاک ہے کیونکہ اشاعت سے پہلے  TURNITINسافٹ وئیر میں  اس کی تصدیق و تنقیح کی جائے گی اور اگر  پہلے سے مطبوعہ مواد سے مماثلت اور مشابہت  طے شدہ حد یعنی   19فی صد سے زیادہ  پائی گئی تو مقالہ ناقابلِ اشاعت تصورہوگا۔  علاوہ ازیں مقالہ نگار اپنے مقالے کے ساتھ ہی سرقے سے پاک ہونے کا  ایک اقرار نامہ جمع کرانے کا پابند ہوگا ۔یہ اقرار نامہ اسی ویب گاہ کے Download Menu  میں جا کر حاصل کیا جاسکتا ہے۔

·     "امتزاج" کو مقالہ بھیجنے کے بعد جب تک اس کے قابلِ اشاعت, ناقابلِ اشاعت یا تبدیل شدہ حالت میں قابل اشاعت ہونے کے بارے میں مجلسِ ادارت کی طرف سے اطلاع موصول نہ ہواُسے کسی اورجریدے میں اشاعت کے لیے نہ بھیجا جائے۔

4۔ مقالہ نگار کا نام، مقالے کا عنوان ، ملخص (Abstract)اور کلیدی الفاظ(Keywords)اُردو اور انگریزی دونوں زبانوں میں تحریر کیے جائیں اورمقالے کا ملخص ڈیڑھ سو سے دو سو الفاظ پر مشتمل ہو۔

5۔   مقالے کے آخر میں حواشی /حوالہ جات (references/endnotes) اور مآخذ (sources)  کی نشاندہی لازم ہے۔

6۔ مقالے میں حوالہ جات /حواشی کے اندراج کا مندرجہ ذیل طریقہ اختیار کیا جائے:

مصنف کا نام، کتاب کا نام(نسخ فونٹ یا Batool Unicode)، قوسین میں شہر کا نام، ناشر،سنِ اشاعت، صفحہ نمبر۔

مثال:   جمیل جالبی، تاریخ ادب اردو ،ج۴،(لاہور :مجلس ترقی ادب ،۲۰۱۲ء) ، ص ۲۴۵

     اگر ایک ہی کتاب سے دویا تین دفعہ حوالہ آئے تو بار بار مکمل حوالہ لکھنے کی بجائےکتاب کا نام ، محولہ بالا اور صفحہ نمبر لکھنا کافی ہوگا۔اگر ایک ہی کتاب کا دوسرا حوالہ فورا آئے تو  ایضا  لکھنا کافی ہے۔صفحہ نمبر الگ ہونے کی صورت میں ایضا کے بعد صفحہ نمبر بھی درج کیا جائے۔

مآخد میں مندرجہ بالا حوالہ اس طرح درج ہوگا:

جالبی ،جمیل، تاریخ ادب اردو،ج۴،لاہور:مجلس ترقی ادب ،۲۰۱۲ء

مزید تفصیلات کے لیے دیکھیے: https://www.chicagomanualofstyle.org/home.html